کراچی( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 16 مئی 2023ء ) پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی محمود مولوی نے تحریک انصاف چھوڑنے کا اعلان کر دیا۔انہوں نے کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی چھوڑنے کا اعلان کر رہا ہوں۔بطور ایم این اے مستعفی ہو رہا ہوں۔عمران خان کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔پارٹی چھوڑنے کی اصل وجہ یہ ہے کہ میں فوج کے خلاف نہ گیا ہوں نہ جاؤں گا۔
سیاسی جماعتیں تو بدلی جا سکتی ہیں مگر ہم فوج کو نہیں بدل سکتے۔پی ٹی آئی چھوڑنے والے محمود مولوی نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی میں یہ سوچ کر آیا کہ یہ سلجھی ہوئی پارٹی ہے،ہمارے عسکری ونگز نہیں تاہم نو مئی کو جو واقعہ دیکھا اس پر بہت دکھ ہوا۔ مجھے 1965 اور 1971 کی جنگ یاد ہے۔ 9 مئی کو وہ کام ہوا جو بھارت کا باپ بھی نہیں کر سکا۔

شہدا کے مجسموں کو توڑا گیا۔

فوجیوں کے اوپر میری سو چیزیں قربان ہیں۔میں سب کو کہوں گا کہ فوج ہے تو پاکستان ہے۔عمران خان خود کہتے تھے فوج ہماری ریڑھ کی ہڈی ہے۔ جس جہاز کی ہم عزت کرتے تھے آج ہم اسی کی بےحرمتی کر رہے ہیں۔فوج کے خلاف جانا مناسب نہیں، فوج کو ہٹاکر ملک نہیں چل سکتا، جو بھی سیاسی جماعت حکومت سے جاتی ہے فوج کے خلاف بولنا شروع کر دیتی ہے۔اس تمام صورتحال کے پیش نظر پی ٹی آئی چھوڑنے کا اعلان کر رہا ہوں، کسی دوسری جماعت میں نہیں جا رہا اور نہ ہی مجھے کوئی پیشکش کر سکتا ہے۔
میری عمر ساتھ نہیں دے رہی ورنہ میں ایک نئی سیاسی جماعت بناتا۔کوئی آدمی بھی مجھ پر ایک روپے کرپشن کا الزام نہیں لگا سکتا۔محمود مولوی نے مزید کہا کہ عمران خان ٹھیک کہا کرتے تھے ہم کوئی غلام ہیں، پارٹی میں دیگر رہنماؤں کو بھی کہوں گا خوف کے بت توڑ دیں۔ان لوگوں کو خوف ہے کہ ہمیں ٹکٹ نہیں ملے گا۔میں یہ نہیں کہتا کہ میرا ووٹ بینک بہت زیادہ ہے، بے شک ووٹ بینک عمران خان کا ہے۔میں عمران خان کی وجہ سے الیکشن جیتا،لیکن ہم فوج کے خلاف جا کر اقتدار میں نہیں آیا۔

No comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *